Blog

تفسیر معالم العرفان

نام : معالم العرفان
مصنف : صوفی عبدالحمید سواتی (رح)
مذکور تفسیر دراصل حضرت مولانا صوفی عبدالحمید سواتی صاحب (رح) کے 1980 سے 1996 تک دئیے گئے دروس قرآن کا تحریر مجموعہ ہے۔ ابتداءً یہ دروس قرآن الحمد سے والناس تک ، تقریباً 475 کیسٹوں میں محفوظ تھے۔ بعد ازاں انہیں تحریری شکل دی گئی ، مصنف نے اس پر کچھ مزید تفسیری نوٹس کا اضافہ کیا۔ اور پھر انہیں شائع کیا گیا ۔
تفسیر معالم العرفان اردو زبان کی ایک اہم تفسیر ہے۔ جس کے چند خصائص مندر جہ ذیل ہیں :
زبان و بیان کی سادگی۔ معالم العرفان کا سب سے بڑا وصف اس کی سادگی ہے، زبان سادہ اور رواں ہے، عام بول چال کی زبان ہے جس سے ابلاغ آسان تر ہوگیا ہے۔ پیرایہ اظہار خوب دلنشیں ہے۔ ربط و تنسیق آیات کا اہم خیال رکھا گیا ہے، اور کتاب کی ترتیب انتہائی سہل و آسان رکھی گئی ہے۔
۔۔۔
مصنف کا تعارف :
مولانا عبدالحمید سواتی کی پیدائش 1917 میں ہوئی،
ابتدائی، اور اعلی تعلیم، پاکستان کے مختلف مدارس اور مختلف اساتذہ سے حاصل کی۔
1914 میں دار العلوم دیوبند گئے، اور حضرت مولانا سید حسین احمد مدنی اور دوسرے اساتذہ سے دورہ حدیث کی تکمیل کرکے سند فراغت حاصل کی۔
دورہ حدیث کے بعد مزید تعلیم کے لیے لکھنو تشریف لے گئے، حضرت مولانا عبدالشکور لکھنوی سے فن مناظرہ اور تقابل ادیان کی تعلیم حاصل کی، بعد ازاں حیدر آباد دکن گئے اور طبیہ کالج میں چار سال کا کورس مکمل کرکے حکیم حاذق کی سند حاصل کی۔
حصول تعلیم کے بعد واپس پاکستان آئے اور گوجرانوالہ میں رہائش اختیار کی، 1952 میں ایک چھوٹی سی کچی مسجد اور اس کے ساتھ مدرسہ کے دو تین کمرے بنا کر دینی مرکز کا آغاز کیا، یہ مرکز اب نصرۃ العلوم کے نام سے مشہور ہے جس کا شمار ملک کے بڑے دینی مدارس میں ہوتا ہے۔
صوفی عبدالحمید سواتی کا یہاں، نصف صدی تک معمول رہا کہ نماز فجر کے بعد ہفتہ میں چار دن قرآن کریم اور دو دن حدیث نبوی کا پابندی سے درس دیا کرتے تھے۔ ان کے قرآن کریم کے دروس کتابی شکل میں مرتب ہوکر بیس ضخیم جلدوں میں معالم العرفان کے نام سے طبع ہوچکے ہیں۔
تقریبا 50 سال علم و عرفان کے نور پھیلانے کے بعد، 2008 میں آپ کی وفات ہوئی۔

Posted in: قرآن مجید

Leave a Comment (0) →

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.