Blog

تفسیر سراج البیان

ترجمہ و تفسیر سراج البیان
تفسیر سراج البیان علامہ محمد حنیف ندوی صاحب کی تالیف ہے۔ آپ کی شخصیت اہل علم کے نزدیک محتاج تعارف نہیں، ایک دو نہیں درجن بھر سے زیادہ ضخیم، معتبر، معیاری اور تخلیقی کتابوں کے مصنف ہیں اور ہر کتاب پر اہل علم سے دادوتحسین حاصل کرچکے ہیں۔ یہ تفسیر، مختصر اور جامع ترین تفسیر ہے۔ ترجمہ میں اصل بنیاد ان ہی دونوں ترجموں کو بنایا ہے جو اکثر تراجم کی بنیاد ہیں لیکن اور لوگوں نے باقاعدہ اس کا اظہار نہیں کیا جیسا کہ مصنف سراج البیان نے اس کو باقاعدہ ذکر کیا ہے۔ علامہ صاحب نے صرف اتنا کیا ہے کہ اگر کوئی لفظ متروک ہوگیا ہے تو اس کو چھوڑ دیا اور نامانوس ہوا تو ترک کردیا اور قاری کے لیے تفہیم و تقریب ذہنی کے لیے پورا پورا انتظام فرمایا۔ ہر صفحہ کے اہم مضامین کی تبویب فرمائی اور اہم مضامین کو مختصر الفاظ میں اجاگر فرما دیا۔ اکثر وہ مضامین نمایاں فرماتے ہیں جو اکثر تفاسیر میں نظر نہیں آتے، اس کے باوجود قبوری تصوف سے کلیتاً اجتناب برتا۔ ٢۔ انداز محققانہ ہے۔ نہ کسی کی تقلید ناکسی سے مرعوبیت۔ ٣۔ تفسیر کا مطالعہ ظاہر کرتا ہے کہ مفسر اپنی وسعت معلومات، علوم نقلیہ و عقلیہ پر اپنی دست رسی کا پورا پورا استعمال کرتا ہے، افکار قدیمہ و جدیدہ کا جامع ہے اور علوم شرعیہ کی پوری معلومات رکھتا ہے اور تمام طرح کی کتب تفسیر سے واقف ہے۔ ٤۔ علم کلام و تصوف کے معارف تفسیری کا استیعاب بہتر انداز میں فرمایا ہے۔ ٥۔ ادبی و لغوی نکات کو حسب موقع اجاگر فرمایا ہے اور اس کے ذریعہ آیت کریمہ کے معنی کی وضاحت فرمائی ہے۔ ٦۔ دور جدید کے مسائل کی وضاحت بحسن و خوبی فرمائی ہے۔ ٧۔ مذہب سلف کا دلیل و برہان سے برتر و اعلیٰ ہونا ثابت کیا ہے۔ ٨۔ حل لغات کا التزام فرمایا ہے۔ ٩۔ انداز بیاں دل نشیں اور وجد آفریں ہے۔ ١٠۔ تفسیر کا مطالعہ بیدار مغز قاری کو عجیب احساسِ سرور عطا کرتا ہے، قرآن کے ندرت خیال اور حسن بیان کا گرویدہ کرلیتا ہے اور اس پر قرآن کی عظمت کا پورا پورا اثر ہوتا ہے۔ اس طرح تفسیر سراج البیان، مختصر ترین ہوتے ہوئے معارف قرآن کا جامع ترین مجموعہ ہے۔

یہ تفسیر علامہ محمد حنیف صاحب ندوی کی تالیف ہے۔ جس کے ناشر ملک سراج الدین اینڈ سنز، پبلشرز لاہور، ہیں۔ اس میں شاہ عبدالقادر دہلوی ، اور حضرت شاہ رفیع الدین دہلوی (رح) کا ترجمہ ملحوظ رکھا گیا ہے اور تفسیر کا تعارف اور خصوصیات کتاب ہی میں ان الفاظ میں لکھا گیا ہے :
یوں تو قرآن پاک کی ہزاروں تفاسیر ہر زبان میں لکھی گئی ہیں۔ مگر اردو زبان میں تفسیر سراج البیان۔ اپنے رنگ میں انوکھی، بےنظیر اور بےمثل ہے۔ یہ تفسیر تمام مستند عربی، فارسی اور اردو تفاسیر اور دیگر کتب احادیث کی مدد سے لکھی گئی ہے اور جن کتب سے مدد لی گئی ہے، ان میں سے کچھ نام یہ ہیں۔ خازن، روح المعانی، تفسیر کبیر امام رازی، تفسیری ابن جریر، در منثور، تفسیر ابن کثیر، مدارک، مسند حاکم، مسند بزار، اسباب النزول از علامہ جلال الدین سیوطی، تفسیر حقانی، خلاصۃ التفاسیر، موضح القرآن، تفسیر حسینی، تفسیر بیان القرآن اور کتب صحاح ستہ، بخاری، مسلم، ترمذی، ابن ماجہ، ابوداود، نسائی، طحاوی، موطا امام مالک وغیرہ۔
دیگر خصوصیات درج ذیل ہیں۔
1 ۔ ہر صفحہ کے مضامین کی تبویب۔ 2 ۔ انداز محققانہ۔ 3 ۔ عصری علوم و معارف سے موقع بموقع استفادہ۔ 4 ۔ تصوف و کلام کے معارف تفسیری کا استعیاب۔ 5 ۔ ادبی و لغوی نکات و حکم کا تذکرہ۔ 6 ۔ جدید زندگی کے مسائل کی وضاحت۔ 7 ۔ مذہب سلف کی برتری اور تفوق کا اظہار۔ 8 ۔ حل لغات۔ 9 ۔ زبان اعلی درجہ کی اور انداز بیان وجد آفریں۔ سب سے بڑی بات یہ کہ آپ اس کا مطالعہ کرکے محسوس کریں گے کہ قرآن دنیا کے ادب میں سب سے عمدہ اضافہ ہے۔

Posted in: قرآن مجید

Leave a Comment (0) →

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.