Blog

تفسیر خزائن العرفان

تفسیر خزائن العرفان
نعیم الدین مراد آبادی
ممتاز عالم دین جن کا تاریخی نام ‘ غلام مصطفے ‘ تھا۔ والد کا نام مولانا محمد معین الدین نزہت تھا۔ ( 21 صفر المظفر 1300 ھ ۔ 18 ذوالحجہ 1367 ھ )
حصولِ تعلیم[ترمیم ]
آٹھ سال کی عمر میں قرآن پاک حفظ کیا۔ اردو اور فارسی کی کتب والد بزرگوار سے پڑھیں۔ ملا حسن تک درس نظامی حضرت مولانا شاہ فضل احمد سے پڑھا اور حضرت مولانا سید شاہ گل محمد سے 1318 ھ میں تکمیل کر کے افتاء نویسی سیکھی۔ طب کی تعلیم مولانا شاہ فضل احمد امروہوی سے حاصل کی۔ 1320 ھ میں دستار بندی ہوئی۔

لقب و خطاب
تدریس میں خاصا کمال حاصل تھا اور ‘ استاذ العلماء ‘ کے لقب سے مشہور تھے۔ مولانا احمد رضا خان فاضلِ بریلوی نے انہیں ‘ صدرالافاضل ‘ کا خطاب دیا۔
تحریر و تحقیق
ایک عرصہ تک مولانا ابو الکلام آزاد کے رسائل ابلاغ اور الہلال میں مضامین لکھتے رہے۔ بیس برس کی عمر میں مولانا شاہ محمد سلامت اللہ رام پوری کے رسالہ ‘ اعلام الاذ کیا ‘ کی تائید میں ‘ الکلمتہ العلیاء ‘ لکھا۔ آپ زبردست مناظر تھے۔ امام احمد رضا خان بریلوی کے ترجمۂ قرآن کنز الایمان پر تفسیری حاشیہ بنام خزائن العرفان تحریر کیا۔
آل انڈیا سنی کانفرنس
1946 ء میں بنارس میں منعقدہ آل انڈیا سنی کانفرنس میں سنی علماء میں اتحاد و اتفاق کی فضا پیدا کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔
وصال
67 برس کی عمر میں 18 ذوالحجہ 1367 ھ میں وصال ہوا۔ جامعہ نعیمیہ مراد آباد میں مزار ہے۔

Posted in: قرآن مجید

Leave a Comment (0) →

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.