Blog

تفسیر بغوی

نام : معالم التنزیل
مصنف : ابو محمد حسین بن مسعود الفراء بغوی شافعی (رح)
مترجم : اشرفیہ مجلس تحقیق
ناشر : ادارہ تالیفات اشرفیہ
ایڈیشن : 2015
امام بغوی (رح) کی یہ تفسیر جو معالم التنزیل یا تفسیر بغوی کے نام سے مشہور ہے، علمی حلقوں میں محتاجِ تعارف نہیں ہے۔ امام بغوی (رح) پانچویں صدی ہجری کے اواخر اور چھٹی صدی کے اوائل کے بزرگ ہیں اور انہوں نے یہ تفسیر اس غرض سے لکھی ہے کہ قرآن کریم کی تفسیر میں روایت و درایت کو جمع کرتے ہوئے ایک ایسی اوسط ضخامت کی کتاب سامنے آئے جو نہ بہت مختصر ہو، نہ بہت طویل، تفسیر سے متعلق ضروری مواد آجائے اور ان کی تفسیر کو علماء و محققین کی نظر میں مندرجہ ذیل امتیازات حاصل ہوئے۔
1 ۔ یہ متوسط ضخامت کی تفسیر ہے جو قرآن کریم کی فہم میں بہت مدد دیتی ہے اور جس میں قرآن کریم کے مضامین تفسیری مباحث کی تفصیلات میں گم نہیں ہوپاتے۔
2 ۔ امام بغوی (رح) چونکہ ایک جلیل القدر محدث بھی ہیں، اس لیے اس کتاب میں عموماً مستند روایات لانے کا اہتمام موجود ہے، ضعیف اور منکر روایات اس تفسیر میں کم ہیں۔
3 ۔ وہ اسرائیلی روایات جن سے اکثر تفسیریں بھری ہوئی ہیں، اس کتاب میں زیادہ نہیں ہیں۔
4 ۔ امام بغوی (رح) نے زیادہ تر زور قرآن کریم کے مضامین کی تفہیم پر دیا ہے اور نحوی اور کلامی مباحث کی تفصیلات سے گریز کیا کیا ہے۔
اسی لیے علامہ ابن تیمیہ (رح) نے قرطبی، زمخشری، اور بغوی رحمہم اللہ کی تفاسیر میں امام بغوی (رح) کی تفسیر کو باقی دونوں پر ترجیح دیتے ہوئے فرمایا : ان تینوں میں بدعتی نظریات اور ضعیف احادیث سے محفوظ ترین تفسیر امام بغوی (رح) کی ہے۔
نوٹ : اصل تفسیر عربی میں ہے۔ ایزی قرآن و حدیث میں اس کا اردو ترجمہ شامل کیا گیا ہے۔
مفسر امام بغوی کا تعارف :
اسم گرامی حافظ فقیہ ابو محمد الحسین بن مسعود الفراء البغوی ہے۔ ان کی پیدائش بغشور نامی شہر میں ہوئی یا “ بغ ” شہر میں ہوئی جس کی طرف نسبت کرکے بغوی کہاجاتا ہے۔ یہ خراسان کا ایک شہر ہے۔ ان کا لقب محی السنۃ ہے۔
علماء اہل سنت والجماعت امام بغوی کی جلالت قدری اور رسوخ فی علم کتاب اللہ وسنت نبیہ میں اجماع ہے کہ یہ امام التفیسر والسنۃ والفقہ ہیں۔
حافظ ذہبی فرماتے ہیں کہ الامام العلامۃ القدوۃ الحافظ شیخ الاسلام ہیں۔ حافظ امام سیوطی (رح) فرماتے ہیں کہ یہ امام التفسیر امام فی الحدیث اور امام فی الفقیہ ہیں۔ مورخ ابن خلکان فرماتے ہیں “ کان بحر فی العلوم ” ۔ علامہ سبکی فرماتے ہیں کہ امام بغوی (رح) کا لقب، محی السنۃ، رکن الدین اور وہ قرآن و حدیث و فقہ میں جامع تھے۔
امام بغوی (رح) کی تصانیف بہت زیادہ ہیں جن میں سے چند کے نام یہ ہیں :
معالم التنزیل، شرح السنۃ، مصابیح السنۃ، التہذیب، مجموعۃ الفتاوی، الانوار فی شمائل المختار، الاربعین۔
آپ کی وفات 516 ہجری میں ہوئی

Posted in: قرآن مجید

Leave a Comment (0) →

Leave a Comment

You must be logged in to post a comment.